مسلم لیگ ن کی حکومت جاتے ہی پنجاب پولیس کے رنگ بدل گئے

مسلم لیگ ن کی حکومت جاتے ہی پنجاب پولیس کے رنگ بدل گئے

مسلم لیگ ن کی حکومت کے جاتے ہی پنجاب پولیس کے رنگ بدل گئے۔ شہباز شریف کی لاڈلی پولیس نے آج اڈیالہ جیل سے نواز شریف کی ملاقات کو آئی خاتون رہنما عظمیٰ بخاری کو ڈرا دھمکا کے باھر نکال دیا۔ سابق وزیر اعظم نواز شریف اس وقت اڈیالہ جیل میں ہیں . جہاں آج جمعرات کے روزآئے لیگی رہنماوں نے نواز شریف سے جیل میں ملاقات کی۔

پاکستان مسلم لیگ نون کے رہنما مشاہد حسین،، راجہ ظفر الحق، احسن اقبال،، خواجہ آصف،، جاوید ہاشمی،، چودھری تنویر، پرویز رشید،، مریم اورنگزیب،، سابق وزیرخزانہ مفتاح اسماعیل، عقیل انجم ہاشمی، طارق فاطمی،غلام دستگیر، خرم دستگیر، جاوید ہاشمی،، دانیال چوھدری، حنا پرویز بٹ، علی رضا بلوچ، علی صفدر، پرویز رشید،، مصدق ملک آج نواز شریف سے ملاقات کرنے کے لیے اڈیالہ جیل پہنچے جہاں انہوں نے سابق وزیر اعظم سے ملاقات کی ۔

نواز شریف کافی ہشاش بشاش نظر آئے. اور انہوں نے انتخابات کے بعد کی صورتحال پر لیگی رہنماوں سے بات چیت کی ۔اس موقع پر نواز شریف سے ملاقات کے لیے پہنچی مسلم لیگ ن کی خاتون رہنماعظمیٰ بخاری کو جیل کے دروازے سے ہی باہر نکال دیا. اس موقع پرعظمیٰ بخاری نے بتایا کہ یہ لوگ مجھ سے ڈرتے ہیں اور انہوں نے مجھے اجازت کے باوجود جیل میں جانے کی اجازت نہیں دی ۔

انکا کہنا تھا کہ میں دروازے پر پہنچی تو پولیس اہلکاروں نے بدتمیزی کی ۔ان کا کہنا تھا کہ انکی حیثیت ہی کیا ہے اور مجھے کہتے ہیں کہ یہاں سے نکل جاو. عظمیٰ بخاری نے بتایا کہ مسلم لیگ ن کی حکومت کے کیجاتے ہی پنجاب پولیس کے رنگ بدل گئے

اپنا تبصرہ بھیجیں