برٹش ہوم آفس

کڑی نگرانی کے باوجود ہر ماہ 500 غیرقانونی پناہ گزین برطانیہ میں داخل ہوسکتے ہیں، برٹش ہوم آفس

کڑی نگرانی کے باوجود ہر ماہ 500 غیرقانونی پناہ گزین برطانیہ میں داخل ہوسکتے ہیں، برٹش ہوم آفس

راچڈیل :پابندیوں ‘ کڑی نگرانی اور کریک ڈائون کے باوجود رواں سال ہر ماہ تقریبا ً پانچ سو کے قریب غیر قانونی مہاجرین برطانیہ میں داخل ہوسکتے ہیں۔ برطانوی ہوم آفس کی طرف سے متنبہ کیا گیا ہے کہ محتاط اندازے کے مطابق پانچ سو کے قریب غیر قانونی پناہ گزین ہر ماہ برطانیہ میں داخل ہو سکتے ہیں۔ سیکرٹری داخلہ پریتی پٹیل غیر قانونی مہاجرین کا راستہ روکنے کیلئے نہ صرف آئندہ چند ہفتوں میں نئے اقدامات کا اعلان کرسکتی ہیں۔

وہ فرانس کیساتھ 30ملین کے معاہدے پر بھی اتفاق کر چکی ہیں جس کے تحت انسانی اسمگلروں اور غیر قانونی پنا ہ گزینوں کی روک تھام کیلئے نظام کو مزید موثر اور مانیٹرنگ سخت کی جائیگی۔

غیر قانونی پناہ گزینوں کا استحصال کرنیوالے جرائم پیشہ گروہوں کی روک تھام کیلئے بھی اقدامات سخت کیے جا رہے ہیں۔ بدترین مجرموں کیلئے عمر قید کی سزا بھی متعارف کرائی جا سکتی ہے

ہوم آفس کی طرف سے مہاجرین کیلئے بھی سوشل میڈیا کے ذریعے آگاہی مہم چلانے کیلئے مالی اعانت فراہم کی جا رہی ہے۔ مہاجرین کو متنبہ کیا جا رہا ہے کہ اگر وہ چینل کو غیر قانونی طو رپر عبور کرنے کی کوشش کرتے ہیں تو ان کے ڈوبنے اور جان سے ہاتھ دھونے کے خطرات موجود ہیں وہ ایسا کرنے سے گریز کریں۔ ایک تصویر میں مردوں کے ایک گروپ کو سمندر میں سامان کے ساتھ دکھایا گیا ہے ،

جس کے ساتھ یہ پیغام بھیجا گیا تھا آپ اپنی زندگی کی قیمت ادا کرسکتے ہیں۔ ہوم آفس تشہری مہم کے ذریعے مسلسل مہاجرین کو غیر قانونی طو رپر چینل عبور کرنے سے روکنے کیلئے کوششیں کر رہا ہے لیکن وائٹ ہال ذرائع نے اعتراف کیا ہے کہ حالیہ اقدامات غیر قانونی مہاجرین کا مکمل طور پرراستہ بند کرنے کیلئے ناکافی ہیں ۔

پیشگوئی میں ہوم آفس نے پانچ سو مہاجرین کے ہر ماہ چینل عبور کرنے کا خدشہ ظاہر کیا ہے۔ 2021 میں مجموعی طو رپر 6ہزار کے قریب مہاجرین برطانیہ میں داخل ہو سکتے ہیں۔ گزشتہ سال یہ تعداد 8ہزار417رہی جب کہ سال 2019میں یہ تعداد 1890ریکارڈ کی گئی تھی۔ وزیر اعظم بورس جانسن کی طرف سے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ انسانی اسمگلرز اور ٹھگ لوگوں کی زندگیو ں کو خطرات میں ڈال رہے ہیں۔ فرانسیسی حکام کیساتھ ملکر غیر قانونی سرگرمیوں کو روکنے کیلئے کام کر رہے ہیں انسانوں کی اسمگلنگ کرنیوالے کسی رعایت کے مستحق نہیں ان سے نمٹنے کیلئے اقدامات کر رہے ہیں ۔

Leave a Reply