Nike sues company for making 'devil's shoes' out of 'human blood'

نائیکی کا ‘انسانی خون’ سے ’شیطان کے جوتے‘ بنانے والی کمپنی پر مقدمہ

نائیکی کا ‘انسانی خون’ سے ’شیطان کے جوتے‘ بنانے والی کمپنی پر مقدمہ

جوتے بنانے کی مشہور کمپنی نائیکی نے پیر کو نیویارک کی ایک کمپنی پر ‘شیطان کے جوتے’ بنانے پر مقدمہ درج کرا دیا ہے۔ ان جوتوں میں مبینہ طور پر انسانی خون کا قطرہ شامل کیا گیا ہے۔
خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق نیو یارک کی کمپنی نے یہ جوتے ‘اولڈ ٹاؤن روڈ’ کے ریپر لل ناس ایکس کے اشتراک سے بنائے ہیں۔
مقدمے میں نائیکی نے اعتراض کی وجہ بیان کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایم ایس سی ایچ ایف پروڈکٹ سٹوڈیو ان کارپوریشن نامی کمپنی نے ان جوتوں پر نائیکی کا سگنیچر نشان بنا کر نائیکی کا نام خراب کیا ہے۔
یہ جوتے پیر کو فروخت کے لیے دستیاب کیے گئے تاہم لل ناس ایکس کو اس مقدمے میں مدعا علیہ کے طور پر نامزد نہیں کیا گیا۔
محدود ایڈیشن کے ان جوتوں کے 666 جوڑوں کے بارے میں ایک ویب سائٹ پر لکھا گیا ہے کہ یہ جوتے نائیکی ایئر میکس 97 سنیکرز کی طرز پر بنائے گئے ہیں جن میں لال سیاہی اور ‘انسانی خون کا ایک قطرہ’ شامل ہے۔
ایک جوتے کے نیچے ‘ایم ایس سی ایچ ایف’ لکھا ہے اور دوسرے کے نیچے ‘لل ناس ایکس’ تحریر ہے۔
کچھ میڈیا کے مطابق یہ جوتے ایک منٹ کے اندر اندر بک گئے تھے اور ان کی ایک جوڑی کی قیمت ایک ہزار 18 ڈالر تھی۔
if u want the 666th pair of the satan shoes quote this tweet and use #satanshoes to be entered and I’ll pick someone by thursday
— nope (@LilNasX) March 29, 2021

اپنے ٹوئٹر پر لل ناس ایکس کا کہنا تھا کہ وہ جوتوں کی 666 ویں جوڑی حاصل کرنے والوں کو ان سوشل میڈیا صارفین میں سے چنیں گے جو ان کے ٹویٹس کو پھیلائیں گے۔
نیویارک کی وفاقی عدالت میں دائر مقدمے میں نائیکی کا کہنا ہے کہ یہ جوتے ‘نائیکی کی منظوری اور اجازت کے بغیر’ بنائے گئے تھے اور نائیکی ‘اس پراجیکٹ کے ساتھ کسی طرح منسلک نہیں ہے’۔
لل ناس ایکس اور ایم ایس سی ایچ ایف نے اس پر فوری کوئی بیان نہیں دیا۔

Leave a Reply