’بیل بوٹم‘: ہائی جیکنگ کی کہانی پر مبنی اکشے کمار کی فلم پر تین خلیجی ممالک میں پابندی کیوں

ایک گھنٹہ قبل

،تصویر کا ذریعہTwitter/akshaykumar

کووڈ لاک ڈاؤن اور پابندیوں کے دوران کئی مہینوں کے بعد تھیٹر مالکان کو سکون ملا جب اداکار اکشے کمار کی فلم ’بیل بوٹم‘ 19 اگست کو بڑی سکرین پر ریلیز ہوئی۔ لیکن دنیا بھر میں ریلیز ہونے والی ’بیل بوٹم‘ پر تین خلیجی ممالک نے پابندی لگا دی ہے۔ اس فلم کو سعودی عرب، کویت اور قطر میں نمائش کی اجازت نہیں دی گئی ہے۔

مادھو بھوجوانی، جیکی بھگنانی، وشو بھگنانی اور نکھل اڈوانی فلم ‘بیل بوٹم’ کے پروڈیوسر ہیں۔

تین خلیجی ممالک میں ‘بیل بوٹوم’ پر پابندی کے بارے میں پروڈیوسر مادھو بھوجوانی نے کہا کہ ’فلم کو ریلیز نہ کرنے کا فیصلہ ہر ملک کا ذاتی معاملہ ہے۔ ہم نے ایک فلم بنائی جو حقیقی واقعات سے متاثر ہے۔ یا ایسے کرداروں کو دکھایا گیا ہے۔ بہت سی چیزیں خیالی بھی لی گئی ہیں۔ اگر کسی ملک نے کوئی فیصلہ کیا ہے تو یہ ان کا ذاتی معاملہ ہے۔ ہم اس پر کچھ نہیں کہہ سکتے۔‘

معروف تجارتی تجزیہ کار کومل نہتا کا کہنا ہے ’مواد پر اعتراضات کی وجہ سے فلم کو ان تینوں ممالک میں ریلیز کرنے کی اجازت نہیں دی گئی ہے۔‘

اس بارے میں کہ مواد کے حوالے سے اعتراض کیا ہو سکتا ہے ، مدھو بھوجوانی نے کہا کہ ہم اس پر تبصرہ نہیں کر سکتے۔

اکشے کمار کی فلم بیل بوٹم

،تصویر کا ذریعہTwitter/akshaykumar

پابندی کی وجہ

دراصل یہ فلم طیارہ ہائی جیکنگ کی کہانی پر مبنی ہے۔

بتایا جا رہا ہے کہ اس کی کہانی 1984 میں طیارہ ہائی جیکنگ کے واقعے پر مبنی ہے جب مسافر طیارے کو ہائی جیک کرکے لاہور سے دبئی لایا گیا۔

1984 کے اصل واقعے کے مطابق متحدہ عرب امارات کے اس وقت کے وزیر دفاع شیخ محمد بن راشد آل مکتوم نے ذاتی طور پر صورتحال کو سنبھالا اور متحدہ عرب امارات کے حکام نے ہائی جیکرز کو پکڑ لیا۔

لیکن اس فلم میں دکھایا گیا ہے کہ صرف انڈین افسران ہی خفیہ مشن کو پورا کرتے ہیں۔ اس کی وجہ سے یہ خیال کیا جاتا ہے کہ فلم میں حقائق کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کی گئی ہے۔ تاہم اس فلم پر پابندی کی وجہ کے بارے میں کوئی سرکاری معلومات سامنے نہیں آئی ہیں۔

فلم کو اچھی اوپننگ نہیں ملی

ملک بھر میں سینما اس وقت صرف 50 فیصد صلاحیت کے ساتھ کھلے ہیں۔ اس کا اثر فلم کی کمائی پر بھی دیکھا گیا ہے۔

فلم کی کمائی کا صرف 30 فیصد مہاراشٹر سے آتا ہے ، لیکن مہاراشٹر میں سنیما ہال بند ہونے کی وجہ سے فلم کی آمدنی متاثر ہو رہی ہے۔

باکس آفس انڈیا کے مطابق 19 اگست کو ریلیز ہونے والی ‘بیل بوٹم‘ نے پہلے دو دنوں میں تقریبا پانچ کروڑ کمائے ہیں۔

یہ اداکار اکشے کمار کی گذشتہ چند سالوں میں ریلیز ہونے والی فلموں کے مقابلے میں معمولی کمائی سمجھی جاتی ہے۔

اکشے کمار کی فلم بیل بوٹم

،تصویر کا ذریعہTwitter/akshaykumar

لیکن پروڈیوسر مدھو بھوجوانی فلم کی کم کمائی سے پریشان نہیں ہیں۔

انھوں نے کہا، ’ہم خوش ہیں کہ ہمیں صرف 50 فیصد صلاحیت کے ساتھ موقع ملا اور فلم اپنے مشن میں کامیاب رہی۔ ہم لوگوں کو سینما گھروں میں لانے میں کامیاب رہے۔‘

مدھو بھوجوانی کا کہنا تھا ’اس فلم کے ذریعے تھیٹر مالکان، سامعین، معاونین اور فلم انڈسٹری سے وابستہ تمام لوگوں نے امید کی کرن دکھائی ہے۔ ہر ایک کی حوصلہ افزائی کی گئی ہے کہ تھیٹر کھولنا بہت ضروری ہے۔‘

اکشے کمار کے علاوہ لارا دتہ ، وانی کپور اور ہما ​​قریشی نے فلم ’بیل بوٹم‘ میں اہم کردار ادا کیے ہیں جبکہ فلم کی ہدایات رنجیت تیواری نے دی ہے۔

اکشے کمار کی فلم بیل بوٹم

،تصویر کا ذریعہTwitter/akshaykumar



Source link

Leave a Reply