پی ایس ایل 7 میں کوئٹہ بمقابلہ اسلام آباد: اعظم خان کی سابقہ ٹیم کے خلاف جارحانہ بیٹنگ، شاہد آفریدی نئی ٹیم کے ساتھ ناکام، اسلام آباد یونائیٹڈ 43 رنز سے فاتح

  • عبدالرشید شکور
  • بی بی سی اردو ڈاٹ کام، کراچی

2 گھنٹے قبل

،تصویر کا ذریعہPCB

جس ٹیم کی بیٹنگ لائن کے تین ابتدائی بیٹسمین پال سٹرلنگ، الیکس ہیلز اور کالن منرو ہوں اور پھر ان کے بعد شاداب خان اور اعظم خان بیٹنگ کے لیے آئیں تو یہ بتانے کی ضرورت نہیں کہ یہ بیٹنگ لائن حریف بولنگ کا کیا حشر کر سکتی ہے۔

اسلام آباد یونائیٹڈ نے جمعرات کی شب یہی کچھ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے ساتھ کیا جس کا نتیجہ 43 رنز کی جیت کی صورت میں سامنے آیا۔

اسلام آباد یونائیٹڈ نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے چار وکٹوں کے نقصان پر 229 رنز بنائے جو اس پی ایس ایل کا سب سے بڑا سکور ہے۔

جواب میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز 186 رنز پر حوصلہ اور میچ ہار بیٹھی۔ یہ چار میچوں میں کوئٹہ کی تیسری شکست ہے جبکہ اسلام آباد کی تین میچوں میں یہ دوسری کامیابی ہے۔

یہ اس پی ایس ایل میں لگاتار چوتھا میچ ہے جس میں جیت پہلے بیٹنگ کرنے والی ٹیم کی ہوئی ہے۔

اننگز میں 15 چھکے اور 17 چوکے

سرفراز احمد نے ٹاس جیت کر اگرچہ اسلام آباد یونائیٹڈ کو پہلے بیٹنگ دی لیکن ان کے بولرز پال سٹرلنگ اور الیکس ہیلز کے طوفان میں بری طرح گھر گئے۔ دونوں نے پہلی وکٹ کی شراکت میں 55 رنز کا اضافہ کیا۔ پاور پلے میں 81 رنز بنے جو اس ٹورنامنٹ میں پاور پلے میں بننے والے سب سے زیادہ رنز ہیں۔

الیکس ہیلز پانچ چوکوں کی مدد سے 22 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے لیکن سٹرلنگ کی جارحیت جاری رہی۔ انھوں نے صرف 28 گیندوں کا سامنا کرتے ہوئے 58 رنز کی عمدہ اننگز کھیلی جس میں سات چوکے اور تین چھکے شامل تھے۔

اسلام آباد یونائیٹڈ کے آؤٹ ہونے والے تیسرے بیٹسمین کپتان شاداب خان تھے جو ایک چھکے کی مدد سے 9 رنز بنا کر گئے لیکن اس کے بعد نیشنل سٹیڈیم میں چھکوں کی ایسی لہر چلی جس نے پہلے سے مایوس سرفراز احمد کی مایوسی میں مزید اضافہ کر دیا۔

سٹرلنگ

،تصویر کا ذریعہPCB

کالن منرو اور اعظم خان نے چوتھی وکٹ کی شراکت میں صرف 52 گیندوں پر 93 رنز کا اضافہ کر ڈالا۔ کالن منرو نے محض 39 گیندوں کا سامنا کیا، وہ پانچ چھکوں اور تین چوکوں کی مدد سے 72 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے۔

اعظم خان جو اپنے والد معین خان کی ٹیم کوئٹہ گلیڈی ایٹرز چھوڑ کر اسلام آباد یونائیٹڈ میں شامل ہوئے ہیں جب چھکوں کی بارش کر رہے تھے تو داد دینے والوں میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے ڈگ آؤٹ میں بیٹھے معین خان بھی شامل تھے۔

اعظم خان نے 35 گیندوں پر 65 رنز کی زبردست اننگز کھیلی جس میں دو چوکے اور چھ چھکے شامل تھے۔

شاہد آفریدی جو پی ایس ایل میں اپنی چوتھی ٹیم کوئٹہ گلیڈی ایٹرز میں شامل ہونے کے بعد پہلا میچ کھیل رہے تھے، اعظم خان کے رڈار میں آ گئے جنھوں نے اپنی اننگز کے 65 میں سے 38 رنز آفریدی کی صرف 10 گیندوں پر بنائے جن میں ایک چوکا اور پانچ چھکے شامل تھے۔

اعظم

،تصویر کا ذریعہPCB

سرفراز احمد نے حیران کن طور پر آخری اوور کے لیے شاہد آفریدی کا انتخاب کیا جس میں اعظم خان نے20 رنز بنا ڈالے۔

شاہد آفریدی کے لیے یہ میچ کسی طور بھی یاد رکھنے والا نہیں تھا جس میں انھوں نے اپنے چار اوورز میں اعظم خان کی وکٹ کے عوض 67 رنز دے ڈالے جو پی ایس ایل کی سب سے مہنگی بولنگ ہے۔ اس سے قبل ظفر گوہر نے گذشتہ سال اپنے چار اوورز میں 65 رنز دیے تھے۔

شاداب ہیڈ لائن بوائے

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے اوپنرز نے اگرچہ پنتیس گیندوں پر 54 رنز کا اضافہ کیا لیکن چار گیندوں پر گرنے والی دو وکٹوں نے کوئٹہ کو بڑا دھچکا پہنچایا۔ پہلے حسن علی نے عبدالواحد بنگلزئی کو 14 رنز پر اعظم خان کے ہاتھوں کیچ کروایا اور پھر وقاص مقصود نے جیمز ونس کی اہم وکٹ صفر پر حاصل کر لی۔

کوئٹہ کی اس مایوسی میں اس وقت اضافہ ہوا جب شاداب خان نے اپنے پہلے ہی اوور میں احسان علی کو بھی پویلین کی راہ دکھا دی۔ احسان علی کی 50 رنز کی اننگز آٹھ چوکوں اور ایک چھکے پر مشتمل تھی۔

71 پر تین وکٹیں گرنے کے بعد صورتحال کپتان سرفراز احمد کے لیے آسان نہ تھی جنھوں نے اپنے سامنے بین ڈکٹ اور افتخار احمد کی وکٹیں گرتے دیکھیں اور پھر خود بھی 11 رنز پر اپنی وکٹ گنوا بیٹھے، ان تینوں کو شاداب خان نے آؤٹ کیا۔

سرفراز

،تصویر کا ذریعہPCB

شاداب خان نے اننگز میں اپنی پانچویں وکٹ شاہد آفریدی کو چار رنز پر آؤٹ کر کے حاصل کی۔ 28 رنز پر پانچ وکٹیں ٹی ٹوئنٹی کرکٹ میں ان کی بہترین بولنگ بھی ہے۔ اس کے علاوہ انھوں نے پی ایس ایل میں اپنی وکٹوں کی نصف سنچری بھی مکمل کرلی۔

محمد نواز اور جیمز فالکنر کی آٹھویں وکٹ کے لیے 76 رنز کی شراکت جیت کے لیے کافی نہ تھی۔ نواز دو چوکے اور پانچ چھکے لگاتے ہوئے47 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

محمد وسیم جونیئر نے لگاتار گیندوں پر سہیل تنویر اور نسیم شاہ کو آؤٹ کر کے جیت کو مکمل کر دیا۔

شاہد

،تصویر کا ذریعہPCB

محمد عامر پی ایس ایل سے باہر

اس پی ایس ایل میں اب تک اپنے تینوں میچوں میں شکست سے دوچار ہونے والی ٹیم کراچی کنگز کے لیے یہ خبر کسی طور اچھی نہیں ہے کہ فاسٹ بولر محمد عامر فٹ نہ ہونے کے سبب پی ایس ایل سے باہر ہو گئے ہیں۔ محمد عامر ابھی تک کسی میچ میں نہیں کھیلے ہیں۔

فاسٹ بولر محمد الیاس بھی کندھا اتر جانے کے سبب ایونٹ سے باہر ہو گئے ہیں۔ وہ پچھلے تینوں میچ کھیلے تھے۔ جو کلارک بھی ان فٹ ہیں اور آئندہ میچوں میں ان کی شرکت یقینی نہیں۔



Source link