’جون ٹینتھ‘ امریکہ میں غلامی کے خاتمے سے منسوب نیا قومی دن

امریکہ کے صدر جو بائیڈن ایک نئے فیڈرل ہالیڈے یعنی قومی تعطیل کی منظوری دینے جا رہے ہیں۔ ’’ جونٹینتھ نیشنل انڈی پینڈینس ڈے‘‘ سے موسوم یہ قومی دن ہر سال 19 جون کو منایا جائے گا اور اس کا مقصد ملک سے غلامی کے خاتمے کی یاد منانا ہے۔

توقع ہے کہ صدر بائیڈن جمعرات کو اس بل پر دستخط کر کے اسے قانون کا حصہ بنا دیں گے.

یہ قومی تعطیل 1865 کے اس دن کی یاد میں ہو گی جب یونین سولجرز نے گیلوسٹن، ٹیکساس میں سیاہ فام قیدیوں کے ایک گروپ کو مطلع کیا تھا کہ اب وہ آزاد ہیں۔ یہ پیش رفت صدر ابراہم لنکن کی جانب سے ’ ایمنسٹی پروکلیمیشن‘ یعنی آزادی کے پروانے پر دستخط کرنے کے اڑھائی سال بعد ہوئی تھی۔

امریکہ کی کئی ریاستوں میں پہلے ہی جونٹینتھ کی مقامی سطح پر عام تعطیل ہوتی ہے۔

1983 میں مارٹن لوتھر کنگ جونئیر ڈے کی عام قومی تعطیل کی منظوری کے بعد یہ پہلا موقع ہے کہ ایک اور دن قومی تعطیلات میں شامل کیا جا رہا ہے۔ اس سے قبل قومی سطح پر سال میں دس عام تعطیلات منائی جاتی ہیں۔

صدر بائیڈن کو بھجوائے جانے سے پہلے سینیٹ نے منگل کو اس بل کی متفقہ طور پر منظوری دی تھی اور اس کے بعد بدھ کو ایوان نمائندگان نے بھی 14 کے مقابلے میں 415 ووٹوں کے ساتھ اس قومی تعطیل کے حق میں ووٹ دیا تھا۔

جونٹینتھ کی عام تعطیل کے حق میں مظاہرے (فوٹو: اے پی)

جونٹینتھ کی عام تعطیل کے حق میں مظاہرے (فوٹو: اے پی)

کانگریس کے بلیک کاکس کے کئی اراکین نے ایوان میں اس بل کے حق میں تقاریر کیں۔ ریاست نیو جرسی سے ڈیموکریٹ رکن بونی واٹسن نے کہا کہ وہ جونٹینٹھ کو ایک جشن کے بجائے یادگار کے طور پر دیکتھی ہیں۔

اس بل کو سینیٹر ایڈورڈ مارکی نے 60 ڈیموکریٹ ’ کو سپانسرز‘ کے دستخطوں کے ساتھ پیش کیا تھا اور بہت تیزی سے دونوں ایوانوں سے منظور ہونے کے بعد اب یہ صدر کی میز پر موجود ہے۔

بعض ری پبلکن رہنماؤں نے اس بل کی مخالفت کی ہے۔ ایوان نمائندگان کے ری پبلکن رکن میٹ روزنڈیل نے کہا ہے کہ جونٹینتھ کی قومی تعطیل ’ شناخت کی سیاست‘‘ کی ایک کوشش ہے۔



Source link

کیٹاگری میں : USA

Leave a Reply